News Detail

new detail picture

Event Title: چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی کا یوم استحصال کشمیر کے موقع پر پیغام

Event Date: 2022-08-04

اسلام آباد(4  اگست 2022) ء  چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے یوم استحصال کشمیر کے حوالے سے اپنے پیغام میں کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کر کے مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی بد ترین پامالی کی مثال قائم کی ہے۔ بھارت نے 5 اگست2019 کو دفعہ370 ختم کر کے کشمیری تشخص کو مسخ کیا ہے جس کی وجہ سے آئینی بحران پیدا ہوا۔ ریاست کی حدود کی تقسیم کر کے کشمیریوں کی توہین کی گئی ہے۔بھارت کا یہ غیر انسانی اقدام اقوام متحدہ کے چارٹر اور سلامتی کونسل کی قرار دادوں کی نہ صرف کھلی خلاف ورزی ہے بلکہ انسانی حقوق کے علمبردار ممالک، اداروں اور تنظیموں کیلئے ایک کھلا چیلنج بن چکا ہے۔5اگست 2019کے بعد مقبوضہ جموں کشمیر کو فوجی چھاؤنی میں تبدیل کر دیا گیا ہے اور سینکڑوں بے گناہ کشمیروں کو شہید اور لاپتہ کیا گیا ہے۔ بھارتی اقدام کی وجہ سے ایک عظیم انسانی المیہ پیدا ہو چکا ہے۔ پاکستان،بھارت کے اس تقسیم کے عمل کو مکمل طور پر مسترد کرتا ہے جس کی بدولت لاکھوں کشمیریوں کو اْن کے بنیاد ی حق سے محروم کیا گیا ہے۔ آبادیاتی تناسب کی تبدیلی سے کشمیروں کابنیاد ی حق خود ارادیت غیر ریاستی باشندوں کے ہاتھوں منتقل کرنا ایک گھناؤنی سازش اور اخلاق سے گری ہوئی حرکت ہے جیسے کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔اقوام عالم اور خاص طور پر مسلم ممالک اس غیر آئینی قد وبند کے تدارک کیلئے مشترکہ لائحہ عمل اختیار کریں اور مظلوم، نہتے اوربے گناہ کشمیریوں کو اْن کی اْمنگوں کے مطابق آزاد ماحول فراہم کریں۔ اقوام متحدہ اور دیگر موثر بین الااقومی اداروں کو ایک جارحانہ سفارتی مہم اختیار کرتے ہوئے اس کے حل کیلئے راستہ نکالنا چاہیے۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے یک زباں اور ایک صفحہ پر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی عوام اور ادارے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی میں نہ صرف معصوم نہتے کشمیریوں کی بھر پور حمایت کرتے ہیں بلکہ ان کی آزادی کے حصول تک کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ملک بھر میں 5اگست کو تمام پاکستانی کشمیروں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور بھارت کے مذموم مقاصد کے خلاف احتجاج ریکارڈ کرائیں گے۔